Poets

350+ Original Mirza Ghalib Poetry in Urdu | Ghalib Shayari

Original Mirza Ghalib Poetry

Mirza Ghalib Urdu Shayari

یہ ہم جو ہجر میں دیوار و در کو دیکھتے ہیں
کبھی صبا کو کبھی نامہ بر کو دیکھتے ہیں

Yë hum jo hijr mëin divar-o-dar ko dëkhtë hain
Kabhi saba ko kabhi nama-bar ko dëkhtë hain.

ہاں وہ نہیں خدا پرست جاؤ وہ بے وفا سہی
جس کو ہو دین و دل عزیز اس کی گلی میں جائے کیوں

Haan woh nahi khuda-parast jaao woh bëwafa sahi
Jis ko ho dëën o dil azëëz us ki gali mëin jaayë kyun.

مے سے غرض نشاط ہے کس رو سیاہ کو
ایک گونہ بے خودی مجھے دن رات چاہیے

Mai së gharaz nashat hai kis ru-siyah ko
Ëk-guna bë-khudi mujhë din raat chaahiyë.

ذکر اس پری وش کا اور پھر بیاں اپنا
بن گیا رقیب آخر تھا جو رازداں اپنا

Zikr us pari-vash ka aur phir bayan apna
Ban gaya raqib akhir tha jo raz-dan apna.

اگر غفلت سے باز آیا جفا کی
تلافی کی بھی ظالم نے تو کیا کی

Agar ghaflat së baaz aaya jafa ki
Talafi ki bhi zalim në toh kya ki.

Mirza Ghalib Sad Poetry in Urdu

ہم بھی تسلیم کی خو ڈالیں گے
بے نیازی تیری عادت ہی سہی

Hum bhi taslim ki khu daalëngë
Bë-niyazi tëri aadat hi sahi.

فائدہ کیا سوچ آخر تو بھی دانا ہے اسد
دوستی ناداں کی ہے جی کا زیاں ہو جائے گا

Faayda kya soch akhir tu bhi daana hai asad
Dosti nadan ki hai ji ka ziyan ho jaayëga.

واعظ نہ تم پیو نہ کسی کو پلا سکو
کیا بات ہے تمہاری شراب طہور کی

Vaaiz na tum piyo na kisi ko pila sako
Kya baat hai tumhari sharab-ë-tuhur ki.

تم جانو تم کو غیر سے جو رسم و راہ ہو
مجھ کو بھی پوچھتے رہو تو کیا گناہ ہو

Tum jaano tum ko ghair së jo rasm-o-rah ho
Mujh ko bhi puchtë raho toh kya gunah ho.

اور بازار سے لے آئے اگر ٹوٹ گیا
ساغر جم سے میرا جام سفال اچھا ہے

Aur bazar së lë aayë agar toot gaya
Saghar-ë-jam së mëra jam-ë-sifal accha hai.

Previous page 1 2 3 4 5 6 7 8 9 10 11 12 13 14 15 16 17 18 19 20 21 22 23 24 25 26 27 28 29 30 31 32Next page

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button