Poetry

150+ Naraz Poetry | Narazgi Poetry in Urdu 2 Lines Quotes

Best Narazgi Poetry in Urdu

Narazgi Poetry in Urdu
Narazgi Poetry in Urdu

ہیلو دوستوں ، کیا آپ نیٹ پر Naraz Poetry کا بہترین مجموعہ تلاش کر رہے ہیں ، اگر ہاں تو پھر آپ کی تلاش یہاں ختم ہوگی۔ urdushayarighar.com آپ کے لئے Narazgi Poetry (الوداع پوٹری) کا حیرت انگیز مجموعہ لے کر آے ہے- جنہیں آپ اپنے Friends یا Boyfriend, Girlfriend کے ساتھ اشتراک کرسکتے ہیں اور انہیں احساس کرا سکتے ہیں۔ ہم نے اپنی ویب سائٹ پر Sad Poetry in Urdu بھی لکھی ہے۔ آپ ان خوبصورت Naraz Poetry in Urdu (الوداع پوٹری) میں بانٹنے کے لئے کسی بھی سوشل میڈیا پلیٹ فارم جیسے Twitter, Instagram, WhatsApp یا Facebook وغیرہ کا استعمال کرسکتے ہیں۔ ہم امید کرتے ہیں کہ آپ ہمارے پیج پر دیئے گئے ان Narazgi Poetry in Urdu کو پسند کریں گے۔

Naraz Poetry in Urdu

Naraaz Poetry
Naraz Poetry in Urdu Pic
تیری بات کو خاموشی سے مان لینا
یے بھی انداز ہے میری ناراضگی کا

Tëri baat ko khaamoshi së maan lëna
Yëh bhi andaaz hai mëri naraazgi ka.

میری بےتابیوں سے گھبرا کر
کوئی مجھ سے ناراض نہ ہو جائے

Mëri bëtaabiyon së ghabra kar
Koi mujh së naraaz na ho jaayë.

ائے غم زندگی نہ ہو ناراض
مجھ کو عادت ہے مسکرانے کی

Ayë gham-ë-zindagi na ho naraaz
Mujh ko aadat hai muskuranë ki.

ناراض نہیں ہوں تیرے فریب سے
غم یے ہے کے تیرا یقین اب کیسے کروں

Naraaz nahi hoon tërë farëb së
Gham yëh hai kë tëra yaqëën ab kaisë karun.

تو بھی ناراض بہت ہے مجھ سے
زندگی تجھ سے خفا ہوں میں بھی

Tu bhi naraaz bahut hai mujh së
Zindagi tujh së khafa hoon main bhi.

Narazgi Poetry in Urdu

Naraz Dost
Naraz Poetry in Urdu
دوست ناراض ہو گئے کتنے
ایک ذرا آئینہ دکھانے میں

Dost naraaz ho gayë kitnë
Ëk zara aaina dikhaanë mëin.

خوشیاں ہی بہتر ہے
شبدوں سے لوگ ناراض بہت ہوا کرتے ہیں

Khushiyaan hi bëhtar hai
Shabdon së log naraaz bahut hua kartë hain.

حسن یوں عشق سے ناراض ہے اب
پھول خوشبو سے خفا ہو جیسے

Husn yun ishq së naraaz hai ab
Phool khushbu së khafa ho jaisë.

مرنے والا خود روٹھا تھا
یا ناراض حیات ہوئی تھی

Marnë waala khud rootha tha
Ya naraaz hayaat hui thi.

فقط تم ہی نہیں ناراض مجھ سے جان جاناں
میرے اندر کا انسان تک خفا ہے

Faqat tum hi nahi naraaz mujh së jaan-ë-jaanaan
Mërë andar ka insaan tak khafa hai.

1 2Next page

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button