Poets

220+ Allama Iqbal Poetry in Urdu | Dr Allama Iqbal Shayari

Original Allama Iqbal Poetry in Urdu

Allama Iqbal Poetry in Urdu
Allama Iqbal Poetry in Urdu

Original Allama Iqbal Poetry in Urdu

زمام کار اگر مزدور کے ہاتھوں میں ہو پھر کیا
طریق کوہکن میں بھی وہی حیلے ہیں پرویزی

Zamam-ë-kar agar mazdur kë hathon mëin ho phir kya
Tariq-ë-koh-kan mëin bhi vahi hëëlë hain parvëzi.

اٹھو میری دنیا کے غریبوں کو جگا دو
کاخ امیرا کے در و دیوار ہلا دو

Uttho mëri duniya kë gharibon ko jaga do
Kakh-ë-umara kë dar-o-divar hila do.

نہیں تیرا نشیمن قصر سلطانی کے گنبد پر
تو شاہیں ہے بسیرا کر پہاڑوں کی چٹانوں میں

Nahi tëra nashëman qasr-ë-sultani kë gumbad par
Tu shahin hai basëra kar pahadon ki chatanon mëin.

علم میں بھی سرور ہے لیکن
یہ وہ جنت ہے جس میں حور نہیں

Ilm mëin bhi surur hai lëkin
Yë woh jannat hai jis mëin hoor nahi.

بھری بزم میں راز کی بات کہہ دی
بڑا بے ادب ہوں سزا چاہتا ہوں

Bhari bazm mëin raaz ki baat këh di
Bada bë-adab hoon saza chahta hoon.

Allama Iqbal Shayari in Urdu

گیسوئے تابدار کو اور بھی تابدار کر
ہوش و خرد شکار کر قلب و نظر شکار کر

Gësu-ë-tabdar ko aur bhi tabdar kar
Hosh o khirad shikar kar qalb o nazar shikar kar.

اگر ہنگامہ ہائے شوق سے ہے لا مکاں خالی
خطا کس کی ہے یا رب لا مکاں تیرا ہے یا میرا

Agar hangama-ha-ë-shauq së hai la-makan khali
Khata kis ki hai ya rab la-makan tëra hai ya mëra.

ہے رام کے وجود پہ ہندوستاں کو ناز
اہل نظر سمجھتے ہیں اس کو امام ہند

Hai raam kë vajud pë hindostan ko naaz
Ahl-ë-nazar samajhtë hain us ko imam-ë-hind.

مجھے روکے گا تو اے ناخدا کیا غرق ہونے سے
کہ جن کو ڈوبنا ہے ڈوب جاتے ہیں سفینوں میں

Mujhë rokëga tu ayë nakhuda kya gharq honë së
Ki jin ko dubna hai doob jaatë hain safinon mëin.

کبھی ہم سے کبھی غیروں سے شناسائی ہے
بات کہنے کی نہیں تو بھی تو ہرجائی ہے

Kabhi hum së kabhi ghairon së shanasai hai
Baat këhnë ki nahi tu bhi toh harjai hai.

1 2 3 4 5 6 7 8 9 10 11 12Next page

2 Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button